Ek Adat Amraz Ka Khatra Barhaye

ایک عام عادت جو مختلف امراض کا خطرہ بڑھائے

اکثر ایسا ہوتا ہے کہ دفتر یا تعلیمی ادارے تک پہنچنے کی جلدی یا دوپہر اور رات کو وقت نہ ہونے پر ناشتہ ، دوپہر یا رات کی غذا چلتے پھرتے یا سفر کرتے ہوئے کھانا پڑتی ہے۔
لوگوں کو لگتا ہے کہ اس سے کوئی نقصان نہیں ہوتا بلکہ ایک طرح کی ملٹی ٹاسکنگ ہے، جس سے وقت بھی بچتا ہے۔

مگر اس کو عادت بنالینا صحت کے لیے تباہ کن ثابت ہوتا ہے کیونکہ یہ متعدد طبی عوارض کا باعث بن سکتی ہے۔
یہاں آپ اس عادت سے صحت پر مرتب ہونے والے منفی اثرات کے بارے میں جان سکیں گے۔

پیٹ پھولنا
یہ ایسے افراد کے سب سے بڑا مسئلہ ہے جو سفر کے دوران کھانے کے عادی ہوتے ہیں، یعنی وقت بچانا ان کو پیٹ پھولنے کی تکلیف کا شکار کردیتا ہے اور ایسا کاثر ہوتا ہے۔ ماہرین طب کے مطابق غذا کو پرسکون جسم کی ضرورت ہوتی ہے تاکہ وہ اسے مناسب طریقے سے ہضم کرسکے، ہمارا جسم خوراک کو توانائی کے حصول کے لیے استعمال کرتا ہے مگر جلدی بازی یا چلتے پھرتے میں کھانے کے نتیجے میں ایسا نہیں ہوپاتا کیونکہ معدے کو آرام نہیں ملتا۔

سینے میں جلن
معدے میں تیزابیت یا سینے میں جلن درحقیقت جسم کی جانب سے یہ اظہار کرنا ہوتا ہے کہ آپ نے کچھ غلط کیا ہے، اگر آپ سفر کے دوران کھاتے ہیں یا چلتے پھرتے، اس کے نتیجے میں نظام ہاضمہ میں موجود سیال متحرک ہوتا ہے جس کی وجہ جسم کی حرکت ہوتی ہے، اس کے نتیجے میں سینے میں جلن کا احساس ہونے لگتا ہے، یعنی جسم کو کھانے کے دوران آرام نہ دینا اس کی بڑی وجہ ہوتی ہے۔

ہضم نہ ہونا
اگر تو آپ نے ایسی جلد بازی میں کھایا ہے تو ہوسکتا ہے کہ ایسا احساس ہو کہ کھانے معدے میں ہی حرکت کررہا ہے، جس کی وجہ جسم کو اسے ہضم کرنے کے لیے مناسب وقت نہ مل پاناہے۔ اگر آپ تلے ہوئے یا مصالحے دار غذائیں کھانا پسند کرتے ہیں تو ایسا اکثر ہونے کا امکان ہوتا ہے۔

قے یا بدہضمی
قے ہونا یا بدہضمی اکث چلتے پھرتے دودھ پینے یا ملک شیک وغیرہ کے نتیجے میں شکار بنا سکتا ہے ، اس کی وجہ یہ ہے کہ دودھ ہمارے معدے کو ہضم کرنے کے لیے کافی ٹھوس ثابت ہوتا ہے اور اسے پرسکون ماحول میں ہی پینے کی ضرورت ہوتی ہے۔

مثانے کے مسائل
چائے اور کافی لوگوں کو کافی پسند ہوتے ہیں اور انہیں چلتے پھرتے بھی پی لیتے ہیں، تاہم اس کے نتیجے میں پیشاب زیادہ آنے لگتا ہے جبکہ مثانے کے دیگر مسائل کا خطرہ بھی بڑھتا ہے۔

گیس
پیٹ میں گیس کافی تکلیف دہ ثابت ہوتی ہے اور اس کی ایک بڑی وجہ چلتے پھرتے کیفین اور کاربونیٹ مشروبات کا استعمال ہوسکتا ہے۔

Be the first to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.


*